شیریں مزاری کی تعزیرات پاکستان  میں بغاوت کی دفعہ  124 اے کیخلاف درخواست کے قابل سماعت ہونے پر  فیصلہ محفوظ

Must read



شیریں مزاری کی تعزیرات پاکستان  میں بغاوت کی دفعہ  124 اے کیخلاف درخواست کے …

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) اسلام آباد ہائیکورٹ نے شیریں مزاری کی تعزیرات پاکستان میں بغاوت کی دفعہ 124 اے کے خلاف درخواست کے قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

نجی ٹی وی ” دنیا نیوز ” کے مطابق چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے شیریں مزاری کی درخواست پرسماعت کی،   دورن سماعت شیریں مزاری کے وکیل نے دلائل دیئے کہ تعزیرات  پاکستان میں بغاوت کی دفعہ 124 اے اظہار رائے کی آزادی سلب کرنے کیلئے استعمال کی جا رہی ہے ،   یہ دفعہ آئین کے بنیادی حقوق سے متصادم ہے ۔

 چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیے کہ پارلیمنٹ پر اعتماد کر کے اسے مضبوط بنائیں،عدالت پارلیمنٹ کا احترام کرتی ہے مگر مداخلت نہیں کرینگے ، درخواست پر مناسب حکم جاری کرینگے ۔ تحریک انصاف کی حکومت میں بھی بغاوت کے الزامات کے تحت مقدمات درج ہوتے رہے ۔

 عدالت نے شیریں مزاری کو ہدایت کی کہ قانون سازی پارلیمنٹ کا اختیار ہے ، آپ کو پارلیمنٹ جانا چاہئے ،  عدالت قانون سازی میں مداخلت نہیں کرے گی،پی ٹی آئی پارلیمنٹ کا حصہ ہے اور قانون سازی کرسکتی ہے، سب کو پارلیمان پر اعتماد کرنا چاہیے، درخواست گزار شیریں مزاری متاثرہ فریق نہیں، اسلام آباد ہائیکورٹ بغاوت کے مقدمات غیر قانونی قرار دے چکی ہے۔

عدالت نے درخواست کے قابل سماعت ہونے سے متعلق فیصلہ محفوظ کرلیا۔

مزید :

اہم خبریںقومی





Source link

More articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Latest article