ڈی آئی جی نے مجھے نقصان پہنچانے کی دھمکیاں دیں معاملے پر چپ نہیں بیٹھیں  گے وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان 

Must read



ڈی آئی جی نے مجھے نقصان پہنچانے کی دھمکیاں دیں ،معاملے پر چپ نہیں بیٹھیں  گے …

گلگت ( ڈیلی پاکستان آن لائن )  وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشید نے  کہا کہ پی ٹی آئی کے لانگ مارچ کے دوران سپریم کورٹ کا فیصلہ آیا کہ  راستوں کو کھولا جائے  مگر   ایس ایس پی  اور ڈی آئی جی مجھے نقصان پہنچانے کی دھمکیاں دیں ، ایسے لگ رہا تھا جیسے غنڈے ہیں ، ہم  معاملے پر چپ نہیں بیٹھیں گے ۔

نجی ٹی وی اے آر وائی کے مطابق   وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشید نے کہا کہ  لانگ مارچ کے دوران راستے میں میری ملاقات عمر ایوب سے ہوئی ، عمر ایوب نے کہا کہ وہاں چلتے ہیں جہاں عمران خان سے ملاقات ہو سکے ، میری گاڑی ابھی رکی بھی نہیں تھی کہ شیلنگ شروع ہو گئی ، جب تک اوپر سے آرڈر نہ ہوں پولیس ایسے احکامات کو نہیں مانتی ، ہم معاملےپر خاموش نہیں بیٹھیں گے ۔

وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان نے کہا کہ صدر اور چیف جسٹس کو خط لکھ رہے ہیں ، اگر ہم نے غلط کیا تو  قرار واقعی سزا ہمیں ملنی چاہئے جسے ہم تسلیم کرینگے ، ان لوگوں کو کس نے اتنی اجازت دی ، رانا ثناء اللہ پر  14 قتل کے الزامات ہیں ،  ان لوگوں نے قومی پرچم لگی ہوئی گاڑی پر فائرنگ کی ، کیا پی ٹی آئی کے ورکرز کا جمع ہونا غلط   ہے ؟َ، جو سلوک ہمارے ساتھ ہوا اس پر شدید غصے میں تھے ۔

خالد خورشید نے کہا کہ قومی اسمبلی میں ہمارا کوئی ایم این اے نہیں ہے ، گلگت بلتستان کامجموعی بجٹ 18 ارب روپے کا ہے ۔

مزید :

اہم خبریںقومی





Source link

More articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Latest article